سوشل ایشوز

حکومت کی ناقص پالیسیاں،مہنگائی کا جِن بےلگام

دووقت کی سبزیوں دالوں سمیت بنیادی اشیاء عوام کی دسترس سے باہرہوگئیں

حکومت کی ناقص پالیسیوں کےباعث مہنگائی کا جِن بےقابو ہوگیا، چینی110، چکی کا آٹا 80 روہے،انڈے فی درجن 160 روپےجبکہ چکن 44 روپےمہنگا ہوگیا، دووقت کی سبزیوں دالوں سمیت بنیادی اشیاء عوام کی دسترس سے باہرہوگئیں۔ تفصیلات کےمطابق لاہورسمیت پنجاب کے مختلف شہروں اور علاقوں میں مہنگائی کو کنٹرول کرنا حکومت کیلئے چیلنج بن گیا ہے۔ عوام مہنگائی سے شدید پریشان اور تنگ ہیں، عوام دو وقت کی روٹی کھانے سے بھی قاصرہیں۔ حکومت کی ناکام پالسییوں کے باعث جہاں صرف مہنگائی ہی نہیں بلکہ بےروزگاری بھی بڑھ گئی ہے۔ جس سے جیب میں پیسا نہ ہونے اور قوت خرید کم ہونے لوگ مزید پریشان ہیں۔ مہنگائی رپورٹ کے تحت مارکیٹ میں آٹے کے10 اور 20 کلو تھیلے کی قلت تاحال برقرار ہے۔

اسی طرح  سرخ آٹا 65 اور سفید فائن 80 روپے سے کم قیمت میں دستیاب نہیں ہے۔ جبکہ چکی آٹے کی قیمت 78 سے 80 روپے کلو تک پہنچ گئی ہے۔ مختلف شہروں میں چینی کے مختلف دام وصول کیے جا رہے ہیں۔ لاہور میں 110 روپے کلو تک فروخت ہونے لگی ہے۔ اسی طرح ایک روز میں ہی برائلر فی کلو قیمت 19 روپےاور ایک ماہ میں مرغی کا گوشت 44 روپے فی کلو مہنگا ہو گیا ہے۔ فی کلو گوشت کی قیمت 252 روپے ہوچکی ہے۔ جبکہ انڈے 160 فی درجن ہو گئے ہیں۔ سبزیاں دالیں اوع بنیادی اشیائے ضروریہ بھی عوام کی دسترس سے باہر ہوچکی ہیں۔

شہریوں نے حکومت کی جانب سے مہنگائی پرعوام پرکوئی ریلیف نہ دینے پرشدید پریشانی اورمایوسی کا اظہارکیا ہے۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ حکومت عوام کوریلیف دینے میں مکمل ناکام ہوچکی ہے۔ دوسری جانب وفاقی وزیرریلوے شیخ رشید نے بھی کہا کہ عمران خان کی حکومت میں سارے زیادہ تروزراء نئے ہیں، لیکن عمران خان نےبہت سیکھا ہے۔ مہنگائی حکومت کی سب سےبڑی دشمن ہے۔ مہنگائی کوکنٹرول کرنےکی پوری کوشش کی جا رہی ہے۔ مہنگائی کوعمران خان ختم کریں گے۔عمران خان سےلوگوں کونفرت نہیں بس مہنگائی کی وجہ سے اختلاف ضرورہے۔ کیا عمران خان ٹی وی نہیں دیکھتا، وہ فون پربھی ٹی وی دیکھتا رہتا ہے

Back to top button