سوشل ایشوز

شاہی قلعہ کے تہہ خانے کی کھدائی‘ قدیم دور کے حیران کن آثار برآمد، سب حیران

کورونا لاک ڈاؤن کے دوران مسجد میں نکاسی آب کے سسٹم کوبہتربنانے کے لئے مختلف حصوں میں کھدائی کا کام شروع کیا گیا تھا

کورونالاک ڈاؤن کے دوران شاہی قلعہ کی موتی مسجد کے تہہ خانے سے قدیم دورکے توشہ خانے کے آثار ملے ہیں جس کو دیکھ کر سب حیران رہ گئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ماہرین آثار قدیمہ کا خیال ہے کہ یہ توشہ خانہ سکھ عہدمیں بنایاگیا جہاں قیمتی نوادرات اورخزانہ رکھاجاتا تھا، والڈسٹی آف لاہوراتھارٹی نے کورونالاک ڈاؤن کے دوران شاہی قلعہ کی تاریخی موتی مسجد کی کنزرویشن کا کام شروع کیاتھا، مسجد میں نکاسی آب کے سسٹم کوبہتربنانے کے لئے جب مختلف حصوں میں کھدائی کی گئی تو ایک تہہ خانے سے توشہ خانے کے آثاربرآمدہوئے ہیں۔

والڈ سٹی لاہور اتھارٹی کے ڈائریکٹر کنزرویشن نجم الثاقب نے بتایا کہ کھدائی کے ذریعے یہ معلوم کرنے کی کوشش کی جارہی تھی کہ مسجد کے نیچے ڈرین سسٹم کس طرح بنایاگیاتھا تاکہ اسے مرمت کیاجاسکے۔اس دوران ایک کمرہ ایسا برآمدہوا جس کے بارے پہلے تویہ شبہ تھا کہ شاید یہ پانی کی سٹوریج کے لیے کوئی تالاب تھا لیکن جب ماہرین نے اس کی بناوٹ کا جائزہ لیاتو اس سے معلوم ہواکہ یہ تالاب نہیں ہے۔

انھوں نے بتایا کہ مختلف تاریخی دستاویزات کے مطالعے اور مختلف ادوارمیں بنائے جانے والے توشہ خانوں کی بناوٹ بارے معلومات سامنے آنے کے بعد یہ واضح ہوا کہ یہ قدیم دورمیں تعمیرکیاگیا توشہ خانہ ہی ہے۔ نجم الثاقب کہتے ہیں یقینامغل بادشاہوں نے یہ توشہ خانہ تعمیرنہیں کروایا ہوگا کیونکہ ان کے عہد میں الگ توشہ خانے بنائے گئے تھے۔دوسری جانب والڈ سٹی اتھارٹی نے شاہی قلعہ کے چھپے تہہ خانوں اور مقامات کو ڈھونڈنے کیلئے 1ارب 45 کروڑ کا منصوبہ تیار کرلیا۔ جہانگیر کی خواب گاہ اور شیش محل کے نیچے چھپے مقامات کی تلاش کی جائے گی۔ والڈ سٹی اتھارٹی کی جانب سے شاہی قلعہ کو اصل شکل میں بحال کرنے اور سیاحوں کی دلچسپی پیدا کرنے کیلئے کام کیا جا رہا ہے تاہم شاہی قلعہ کے بہت سے مخفی مقامات ایسے ہیں جنھیں اب تک تلاش نہیں کیا جا سکا، اس مقصد کیلئے والڈ سٹی اتھارٹی نے 1ارب 45 کروڑ روپے لاگت کا منصوبہ تیار کیا ہے۔ جس کے تحت جہانگیر کی خواب گاہ اور شیش محل کے نیچے تہہ خانوں اور مخفی مقامات کو تلاش کیا جائے گا۔ اس کے علاوہ دیوان عام اور پرانے اکبری گیٹ کو اصل شکل میں بحال کیا جائے گا، قلعہ میں ایک میوزیم اور ترجمان سنٹر بھی قائم کیا جائے گا، والڈ سٹی اتھارٹی نے منصوبے کا پی سی ون تیار کرکے منظوری کیلئے پنجاب حکومت کو بھجوا دیا ہے۔

Back to top button