سوشل ایشوز

آکسیجن سلنڈرفراہم کرنےوالا دکھی انسانیت کا مسیحا نکلا

محمد کاشف نے بتایا کہ ایسے افراد جو رعایت مانگتے ہیں انھیں نصف تک رعایت دیتے ہیں

آکسیجن سلنڈرفراہم کرنےوالا دکھی انسانیت کا مسیحا نکلا، کورونا وبا کےدوران جہاں ادویات کی مصنوعی قلت اوربلیک مارکیٹنگ کرنے والےانسانیت اورکاروباری اخلاقیات کی دھجیاں بکھیر رہے ہیں وہیں کراچی کے ایک آکسیجن ڈیلرنے غریب اور مستحق طبقے کے لیے مفت آکسیجن کی سہولت فراہم کرکے ثابت کردیا ہے کہ خالق کائنات کی رضا اور انسانیت کی خدمت کے لیے کاروباری نفع کی کوئی حیثیت نہیں۔

پاک اورینٹ گیسز کمپنی کے نام سے کام کرنے والے آکسیجن ڈیلر محمد کاشف نے کورونا کی وباسے قبل بھی مستحق مریضوں کو مفت آکسیجن فراہم کر رہے تھے تاہم کورونا کی وباکے دوران آکسیجن کی طلب بڑھنے کی وجہ سے مستحق اور غریب طبقہ کے لیے آکسیجن کا حصول مشکل ہوگیا جس پر میں نے مفت فراہمی کا دائرہ مزید وسیع کردیا۔

محمد کاشف نے بتایا کہ ایسے افراد جو رعایت مانگتے ہیں انھیں نصف تک رعایت دیتے ہیں اور جو لوگ آکسیجن خریدنے کی سکت نہیں رکھتے انھیں مفت آکسیجن سلنڈر فراہم کرتے ہیں۔ محمد کاشف کے مطابق آکسیجن کی طلب میں غیرمعمولی اضافہ نہیں ہوا اور قیمت میں بھی گزشتہ ہفتہ 100روپے کا اضافہ ہوا ہے جو کم زیادہ ہوتی رہتی ہے۔

انھوں نے کہا کہ بیشتر مستحق افراد سلنڈر خریدنے کی سکت نہیں رکھتے اور اشد ضرورت کے حامل خاندانوں کو وہ آکسیجن سلنڈر بھی مہیا کرتے ہیں، آکسیجن کی فراہمی کے اخراجات ان کے اہل خانہ اٹھاتے ہیں اور اب مخیر حضرات بھی ان کے ساتھ مل کر مستحق افراد کو آکسیجن کی فراہمی آسان بنارہے ہیں۔

محمد کاشف نے بتایا کہ ان کی کمپنی کئی سال سے گیسز کا کاروبار کررہی ہے اور کراچی کے چھوٹے بڑے 80سے زائد اسپتالوں کوبھی آکسیجن سلنڈر سپلائی کرتی ہے، آکسیجن کی قلت اور طلب میں غیرمعمولی اضافہ کی اطلاعات غلط ہیں ان دنوں بھی ان کے پاس تین چار فیملیز ہی آتی ہیں جو مفت آکسیجن کی درخواست کرتی ہیں۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads. because we hate them too.