سوشل ایشوز

قیمتوں میں کمی پرگھی،آئل کے بحران کا خدشہ

گھی اورکوکنگ آئل کی قیمتوں میں 70سے 80روپے فی کلو کمی کے بعد گھی مل مالکان نے ترسیل روک دی

گھی اورکوکنگ آئل کی قیمتوں میں 70سے 80روپے فی کلو کمی کے بعد گھی مل مالکان نے ترسیل روک دی، کوکنگ آئل اور گھی کا بحران پیداہونے کا خدشہ،قیمتوں میں کمی پر منافع خور،ذخیرہ اندوز،ڈیلراور ایجنٹ پریشان، گذشتہ 6ماہ کے دوران کوکنگ آئل اور گھی کی قیمتوں میں 300گناہ اضافہ کیا گیا،شہریوں  نے گھی مل مالکان کیخلاف کارروائی کا مطالبہ  کر دیا۔ذرائع کے مطابق انڈونیشیا سے خام پام آئل درآمد کرنے بعد خوردنی تیل اور گھی کی قیمتوں میں مسلسل کمی ہونا شروع ہوگئی،گھی اور کوکنگ آئل کی قیمتوں میں اضافے کے بعداوپن مارکیٹ میں 600روپے فی کلو تک فروخت ہونے والاگھی اورآئل  قیمتوں میں کمی کے بعداس وقت 540سے 500روپے تک فروخت ہورہا ہے گذشتہ 6سے 8ماہ کے دوران خوردنی تیل اور گھی کی قیمتوں میں 300گناہ اضافہ ہوگیا تھا،

گھی اورکوکنگ آئل کی قیمتوں میں مسلسل کمی سےمنافع خور،ذخیزہ اندوز،ڈیلراورایجنٹ پریشان ہیں جبکہ خوردنی تیل اورگھی کی قیمتوں میں کمی کےخوف سےملک بھرکی گھی ملوں نےترسیل بند کردی تاکہ خوردنی تیل اورگھی کا بحران پید اہوسکےتاکہ قیمتوں میں مزید کمی نہ ہوسکےکیونکہ گزشتہ تین چارروزسے گھی اورآئل کی قیمتوں میں کم وبیش 70 سے 80 روپے فی کلو تک کمی ہوچکی ہے جس نےسٹاک مافیا کی نیندیں حرام کردی ہیں ذخیرہ اندوزی کرنیوالوں نے گھی کی قیمتوں میں اضافہ کے امکان کیساتھ ہی لاکھوں روپے کا گھی خرید کر سٹاک کر لیا اور ہر روز بڑھتی  قیمتوں کے باعث سٹاک مافیا کی خوب چاندی ہوئی مگرگزشتہ کچھ دنوں سے جیسے ہی قیمتیں نیچے آئیں تو انہوں نے عوام کو اب نئے انداز سے لوٹنا شروع کر دیا ہے،اس سلسلے میں شہریوں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ مصنوعی مہنگائی کرنے والوں کے خلاف سخت سے سخت کارروائی کی جائے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.