سوشل ایشوز

تشدد سے ہلاک ہونیوالے دو افر اد پر لگائے گئے الزامات جھوٹ کا پلندہ نکلے

جاں بحق دونوں افراد پر لگائے گئے الزامات جھوٹے ہیں، ٹیلی کام کمپنی کے دونوں ملازمین پہلی دفعہ مچھر کالونی آئے تھے: پولیس

کراچی کی مچھر کالونی میں عوام کے تشدد سے ہلاک ہونے والے دو افراد پر اہل محلہ کی جانب سے لگائے گئے الزامات جھوٹے نکلے ‘ جس کے بعد سب حیران رہ گئے۔

تفصیلات کے مطابق کراچی کے علاقے ماڑی پور مچھر کالونی کے قریب عوام نے تشدد کرکے دو افراد کو قتل کیا، علاقہ مکینوں نے الزام عائد کیا تھا کہ دونوں افراد بچوں کو اغوا کرنے کی کوشش کر رہے تھے تاہم پولیس حکام کا کہنا ہے کہ جاں بحق دونوں افراد پر لگائے گئے الزامات جھوٹے ہیں، ٹیلی کام کمپنی کے دونوں ملازمین پہلی دفعہ مچھر کالونی آئے تھے۔ ایس ایس پی فدا حسین جانوری کے مطابق ایمن جاوید ٹیلی کام کمپنی کا انجینئر اور سعید اسحاق پنہور ڈرائیور تھا، دونوں موبائل فونز کے سگنلز چیک کرنے ماڑی پور کے علاقے مچھر کالونی پہنچیتو ایک بچے سے آگے جانے کا راستہ پوچھ رہے تھے کہ علاقہ مکینوں نے گھیرا اور لاتوں، گھونسوں، ڈنڈوں اور پتھروں سے مارنا شروع کردیا۔

اہل محلہ نے الزام یہ لگایا کہ دونوں اسکول کے بچوں کو اغوا کرنے کی کوشش کررہے تھے۔ ہولناک تشدد کے باعث دونوں ملازمین موقع پر ہلاک ہوگئے۔ تشدد کے دوران نامعلوم ملزمان ،مقتولین کا دفتری سامان لیکر فرار ہوگئے،جس میں لیپ ٹاپ، ٹیلی کام کے آلات ،موبائل فونز اور پرس شامل ہیں۔ پولیس نے تشدد میں ملوث مرکزی ملزم عبدالغفور سمیت تین ملزمان کو گرفتار کرلیا ہے۔ پولیس کے مطابق مقتول ایمن جاوید کا آبائی تعلق ٹھٹھہ سے تھا اور کچھ عرصے بعد اس کی شادی ہونے والی تھی جبکہ نوشہرو فیروز سے تعلق رکھنے والے مقتول سعید اسحاق پنہور کی تین بیٹیاں ہیں۔ پولیس نے علاقہ مکینوں کے الزام کو غلط قرار دیا ہے۔ ورثاء نے حکومت سے انصاف فراہم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.