کھیل

ہارون رشید نے ڈومیسٹک کرکٹ کے حق میں آواز اُٹھا دی

ہارون رشید نےکہا کہ سابقہ سسٹم میں کئی کھلاڑی اداروں کےساتھ ایسوسی ایشنزسےبھی کھیلتے تھے

ڈومیسٹک سسٹم کے مسائل بیان کرنے کیلیے اسد شفیق کی مثالیں دی جانے لگیں۔ سابق ٹیسٹ کرکٹرہارون رشید نے کہا ہے کہ سینئر بیٹسمین کا 70ٹیسٹ کھیل کر بھی ٹیم میں جگہ پکی نہ کرنے سے ڈومیسٹک کرکٹ کی خامیوں ظاہر ہوتی ہے، نیا نظام تشکیل دینے میں اہم کردار اداکرنے والے پی سی بی کے سابق ڈائریکٹرڈومیسٹک کے مطابق پرانےسسٹم سے پلیئرزپول تیارنہیں ہورہا تھا۔

انھوں نےکہا کہ بورڈ نےمسائل کی نشاندہی اورحل تلاش کرنےکیلیےٹاسک فورس بنائی جس میں میرے ساتھ مدثرنذراوردیگربھی شامل تھے،ہم نےخاصا کام کرتےہوئےحکمت عملی بنائی،ہماری رائےتھی کہ ایسوسی ایشنزکےاپنےپیروں پرکھڑے ہونےتک ڈپارٹمنٹس کوساتھ چلائیں توبےروزگاری کا مسئلہ کم ہوگا،ادارے بطوراسپانسرزبھی اپنا کردارادا کرتےرہیں گے،وزیراعظم عمران خان نےکہا کہ یوں متوازی سسٹم چلتےرہنےسےمقاصد حاصل نہیں ہوں گے۔ انھوں نےایسوسی ایشن ٹیموں کی تعداد میں اضافےکی تجویزبھی مسترد کرتےہوئےکہا کہ اگرصوبائی ٹیموں کےبجائےشہروں کا سلسلہ شروع ہوگیا تو پہلےکی طرح کسی نہ کسی وجہ سےتعداد بڑھتی جائےگی۔

ہارون رشید نے کہا کہ سابقہ سسٹم میں کئی کھلاڑی اداروں کے ساتھ ایسوسی ایشنز سے بھی کھیلتے تھے،زائد عمر کے کرکٹرز کی تعداد بھی خاصی زیادہ تھی،ان میں سے کئی ابھی بے روزگار تو ہوگئے مگر آگے چل کر 90سٹی ایسوسی ایشز کی ٹیموں میں کوچز،سلیکٹرز اور گراؤنڈ اسٹاف کی صورت میں ملازمتیں حاصل کرتے جائیں گے۔ ہارون رشید نے کہا کہ وسیم خان نے چیف ایگزیکٹیو کا عہدہ سنبھالا تو وہ اپنی ٹیم لانا چاہتا تھے، انھوں نےندیم خان اورجنید ضیاء سمیت بہترافراد کا انتخاب کیا ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads. because we hate them too.