فیچرڈ پوسٹکھیل

تیراک لڑکیوں کا مذاق کیوں بنایا گیا؟ حقیقت بےنقاب

برطانیہ سے تعلق رکھنے والی تیراک لڑکیوں کا مذاق کیوں بنایا گیا؟انسانیت کوشرما دینےوالی حقیقت بےنقاب ہوگئی

برطانیہ سے تعلق رکھنے والی تیراک لڑکیوں کا مذاق کیوں بنایا گیا؟انسانیت کوشرما دینےوالی حقیقت بےنقاب ہوگئی، ہم میں سے بہت سے لوگوں چاہیں گے کہ ہم زیادہ ایتھلیٹک ہو جائیں، مگر پیشہ ور تیراک کیٹ شارٹمین اور ایزی تھروم کے لیے ان کی جسامت تضحیک اور بدسلوکی کا باعث بن گئی ہے۔ 19 سالہ کیٹ اور 20 سالہ ایزی ٹوکیو 2020 اولمپک مقابلوں میں برطانیہ کی نمائندگی کریں گی جہاں وہ سنکرونائزڈ سوئمنگ کے کھیل میں شرکت کریں گی۔

وہ اپنی جسامت کے بارے میں کہتی ہیں کہ ان کے چوڑے کندھے ہیں، اور ان کی چھاتیاں اور کولہے انتہائی چھوٹے ہیں۔ دس سال سے تیز تیراکی، ویٹ لفٹنگ، ڈانس اور جیمناسٹکس کی مسلسل تربیت وجہ سے ان کی جسامت نے یہ شکل اختیار کی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ انھیں اکثر ‘مردانہ‘ کہا جاتا ہے۔ ایزی کا کہنا ہے کہ اکثر تیراکوں کے کندھے چوڑے ہوتے ہیں۔

’جب میں چھوٹی تھی تو اپنے کندھے ڈانپ لیتی تھی، کھلے کھلے کپڑوں کی وجہ سے یہ کم نمایاں ہو جاتے تھے۔ اگر میں سوشل میڈیا پر تصاویر پوسٹ کر رہی ہوتی تھی تو میں انھیں کاٹ دیتی تھی یا پھر انھیں کم نمایاں کرنے کی کوشش کرتی تھی تاکہ لوگ منفی باتیں مت کریں۔‘ ان لڑکیوں کو باڈی شیمنگ یعنی جسامت کی وجہ سے تضحیک کا سامنا ٹرینگ کے علاوہ سکول میں بھی تھا۔

کیٹ کہتی ہیں کہ لوگ عوامی سوئمنگ پول میں ان کے پاس آ کر کہتے تھے کہ ’برائے مہربانی کیا آپ خود کو ڈھانپ سکتی ہیں؟‘ ’ہم باقی لوگوں کی طرح ون پیس کاسٹیوم پہنتی ہیں مگر ایتھلیٹک جسامت ہونے کی وجہ سے وہ کاسٹیوم کولہوں پر تھوڑا اونچا ہوتا ہے۔‘ ان کا مزید کہنا ہے کہ ’لڑکے چاہے سپیڈو پہن کر پھریں، وہ تو ٹھیک ہے مگر لڑکیاں جیسے ہی تھوڑی سی جلد دیکھا دیں تو ان پر الزام لگتا ہے کہ وہ اپنے جسم کی نمائش کر رہی ہیں۔‘

کیٹ اور ایزی کا کہنا ہے کہ انھوں نے ان منفی رویے کے ساتھ جینا سیکھ لیا ہے اور وہ کیسی دکھتی ہیں اسے انھوں نے تسلیم کر لیا ہے۔ انھوں نے بی بی سی ریڈیو ون نیوز بیٹ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ’ہمارے کولہے بڑے نہیں، ہماری چھاتیاں بڑی نہیں مگر ہم یہ سب اس کھیل کے جنون میں کرتے ہیں۔‘

’جب آپ ہفتے میں 40 گھنٹے اپنے کھیل کی مشق کر رہے ہیں تو ظاہر ہے کہ آپ کی وہ جسامت نہیں ہوگی۔‘ ایزی کہتی ہیں ’ہم یہ سب اس کھیل کی محبت میں کرتے ہیں، کسی خاص طرح دِکھنے کے لیے نہیں۔‘ یہ دونوں لڑکیاں برسٹل سے تعلق رکھتی ہیں۔ حال ہی میں وہ ایک برطانوی زیرِ جامع برانڈ بلو بیلا کے لیے شوٹ میں شریک ہوئیں جو کہ زیر آب عکس بند کیا گیا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.