کھیل

خواتین کے کھیلوں میں حصہ لینے کا معاملہ، چیئرمین افغانستان کرکٹ بورڈ نے بڑی خوشخبری سنا دی

ہمیں خواتین کو کرکٹ کھیلنے سے روکنے کے لیے نہیں کہا گیا ہے، ہمارے پاس 18 سال سے خواتین کی ٹیم ہے حتی کہ وہ کوئی بڑی ٹیم نہیں

افغانستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین نے بڑی خوشخبری سناتے ہوئے کہا ہے کہ ملک میں خواتین کے کھیلوں میں حصہ لینے پر باضابطہ کوئی پابندی نہیں ہے۔

تفصیلات کے مطابق افغان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین عزیز اللہ فاضلی نے کہا کہ ہم نے ملک میں خواتین کرکٹر کے حوالے سے طالبان کی اعلی قیادت سے بات کی ہے جس پر ان کا ماننا ہے کہ ملک میں خواتین کے کھیلوں بالخصوص ویمن کرکٹ پر کوئی پابندی عائد نہیں۔ عزیز اللہ فاضلی کے مطابق طالبان قیادت نے کہا کہ انہیں خواتین کے کھیلوں میں حصہ لینے سے کوئی مسئلہ نہیں۔ افغان کرکٹ چیف نے مزید کہا کہ ہمیں خواتین کو کرکٹ کھیلنے سے روکنے کے لیے نہیں کہا گیا ہے، ہمارے پاس 18 سال سے خواتین کی ٹیم ہے حتی کہ وہ کوئی بڑی ٹیم نہیں اور ہم اب تک اس طرح پر بھی نہیں ہیں۔ عزیز اللہ فاضلی کا کہنا تھا کہ مگر ہمیں اپنے مذہب اور ثقافت کو ذہن میں رکھنے کی ضرورت ہے،ا گر خواتین اس دائرے میں لباس کو ملحوظِ خاطر رکھتی ہیں تو خواتین کے کھیلوں کی سرگرمیوں میں حصہ لینے پر کوئی مسائل نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دیگر ممالک کی ٹیموں کی طرح فٹبال کے لیے اسلام خواتین کو شارٹس پہننے کی اجازت نہیں دیتا، ہمیں اس طرح کی چیزیں اپنے ذہن میں رکھنا ہیں، اسپورٹس میں ہمیں کوئی مسئلہ نہیں ہے، ہم گزشتہ دو ماہ سے ٹریننگ کررہے ہیں، حتی کہ طالبان حکومت کے اقتدار میں آنے کیبعد بھی کھیلوں کی سرگرمیاں جاری ہیں۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.