کھیل

2011 کےسیمی فائنل میں شعیب اختر کےساتھ کیا ہوا؟

سابق ٹیسٹ کرکٹر شعیب اختر نے سال2011 کے ورلڈ کپ سیمی فائنل کی آپ بیتی سنا ڈالی

ایک بیان میں شعیب اخترنےکہا کہ مینجمنٹ کوموہالی میں 2011 کےسیمی فائنل میں مجھےکھلانا چاہیےتھا، میرے ساتھ ٹیم مینجمنٹ نےبہت زیادتی کی۔ انہوں نےکہا کہ میرے پاس 2 میچ رہ گئےتھے،میری خواہش تھی کہ پاکستان فائنل کھیل رہا ہو،مجھےمعلوم تھا بھارت پرپریشر ہےاورپاکستان کوسیمی فائنل کا پریشرنہیں لینا چاہیےتھا۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ میرے حوالےسےکہا گیا کہ میں فٹ نہیں ہوں لیکن میچ سے قبل میں نے 8 اوورزوارم اپ کےدوران کیے۔

شعیب اخترنےکہا کہ میں اس میچ میں سہواگ اورسچن ٹنڈولکرکےپیچھےپڑجاتا،میں نےسیمی فائنل کےدوران 6 سات گھنٹےڈریسنگ روم میں بہت مشکل سےگزارے۔ قومی ٹیم کےسابق فاسٹ بولرکا کہنا تھا کہ میں نےغصےمیں ڈریسنگ روم میں چند چیزیں بھی توڑڈالیں،اگرمجھے بھارت کےخلاف کھلایا جاتا توبھارت پریشرمیں ہوتا،پاکستان نےباآسانی بھارت کو 2011 ورلڈکپ سیمی فائنل دے دیا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.