ٹیکنالوجی

ٹک ٹاک کی جانب سے اے آئی ٹیکنالوجی پرمبنی اواتارزکا فیچر متعارف کرا دیا گیا

ٹک ٹاک کی جانب سےبرانڈز اور کریٹیرز کے لیے اسٹاک اواتارتیارکیےجائیں گےجن کوکمرشل بنیادوں پراستعمال کرنے کےلیے لائسنس کی ضرورت ہوگی

سنگاپور(ٹیکنالوجی ڈیسک) مقبول سوشل میڈیا ایپ ٹک ٹاک کی جانب سے آرٹی فیشل انٹیلی جنس (اے آئی) ٹیکنالوجی پر کافی کام کیا جا رہا ہے۔ اب اس ویڈیو شیئرنگ ایپ میں اے آئی ٹیکنالوجی پر مبنی اواتارز کا فیچر برانڈز اورکریٹیرز کےلیےمتعارف کرا دیا گیا ہے۔ ایک رپورٹ کےمطابق ٹک ٹاک کی جانب سےبرانڈز اور کریٹیرز کے لیے اسٹاک اواتارتیارکیےجائیں گےجن کوکمرشل بنیادوں پراستعمال کرنے کےلیے لائسنس کی ضرورت ہوگی۔

اسی طرح کاسٹیوم اواتار کا آپشن بھی دستیاب ہوگا جو کسی صارف کی شخصیت یا کسی برانڈ سے جڑی شخصیت کی نمائندگی کرے گا۔ اس نئے ٹول کے بعد ٹک ٹاک کے فار یو پیج میں اے آئی ٹیکنالوجی پر مبنی ویڈیوز کی تعداد بڑھ سکتی ہے، جن پر لیبل لگائے جائیں گے تاکہ صارفین کو علم ہوسکے کہ وہ آرٹی فیشل انٹیلی جنس ٹیکنالوجی سے تیار کردہ ویڈیو دیکھ رہے ہیں۔

ٹک ٹاک کے عہدیدار اینڈی یانگ نے بتایا کہ اے آئی اواتار سے صارفین کو نئے مواقع دستیاب ہوں گے۔ اس فیچر کا بنیادی مقصد ٹک ٹاک میں ای کامرس کو فروغ دینا ہے اور کمپنی کا ماننا ہے کہ اے آئی اواتار انسانی کریٹیرز کا بھی مقابلہ کر سکیں گے۔ بتایا گیا تھا کہ ٹک ٹاک میں اے آئی ٹیکنالوجی پر مبنی اواتارز کا فیچر متعارف کرایا جا رہا ہے۔

اس فیچر کے تحت صارفین 3 سے 10 تصاویر اپ لوڈ کرکے 5 آرٹ اسٹائلز کو منتخب کر سکیں گے۔ اس کے بعد ایپ کی جانب سے 30 مختلف اواتار چند منٹوں میں تیار کیے جائیں گے جن میں سے کسی ایک یا سب کو ڈاؤن لوڈ کرکے پروفائل فوٹو یا اسٹوریز میں استعمال کرنا ممکن ہوگا۔ مگر پھر اس پر مزید کام نہیں ہوا اور اب اسے کچھ تبدیلیوں کے ساتھ متعارف کرایا جا رہا ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button