ٹیکنا لوجی

امریکا میں ٹک ٹاک پر پابندی ختم کردی گئی

حکومت کی جانب سےچینی لپ سنکنگ ایپ ٹک ٹاک پرفوری پابندی کےفیصلےکوعارضی طورپرملتوی کردیا گیا

امریکی حکومت کی جانب سےچینی لپ سنکنگ ایپ ٹک ٹاک پرفوری پابندی کےفیصلےکوعارضی طورپرملتوی کردیا گیا ہے۔امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ نےچینی ایپ ٹک ٹاک کوامریکا میں بند کرنےیا اپنےشیئرزبیچنےکا کہا تھا اوراب اس تاریخ میں توسیع کرکےٹک ٹاک کومزید 15 دن کی مہلت دی گئی ہے۔  اب ٹرمپ انتظامیہ نےبائٹ ڈانس کو 15 دن کی توسیع دیتےہوئےچینی کمپنی کوہدایت کی ہےکہ وہ 15 دنوں کےاندراندراپنےشیئرزفروخت کرے۔

خیال رہے کہ امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ نےالزام لگایا تھا کہ چین ٹک ٹاک کےذریعےجاسوسی کرسکتا ہےجب کہ نومبر 2019 میں امریکا نے جاسوسی کےخطرے کےپیش نظراپنےفوجیوں کوٹک ٹاک کےاستعمال سےروک دیا تھا۔ چینی ٹیکنالوجی کمپنی ’بائٹ ڈانس‘ جس کی بنیاد 2012 میں رکھی گئی تھی،مقبول ترین ایپ ٹک ٹاک کی مالک ہے۔ یہ ویڈیوشیئرنگ ایپ صرف چین میں ہی متعارف کرائی گئی تھی اورایک سال بعد 2017 میں اس کمپنی نےدنیا بھرمیں ’میوزکلی‘ نامی ایپ متعارف کرائی جسےبعد ازاں ٹک ٹاک ایپ میں تبدیل کردیا گیا۔

Back to top button