ٹیکنا لوجی

ایپل کوایک بارپھر 113 ملین ڈالرہرجانےکا سامنا

امریکی ریاستوں نےدعویٰ کیا تھا کہ ٹیکنالوجی کمپنی ایپل پرانےموبائل فونزکی کارکردگی اس لیےسست کردیتی ہے

معروف ٹیکنالوجی کمپنی ایپل اپنےموبائل فونزکی کارکردگی سست کیےجانےکےالزامات کےعوض 113 ملین امریکی ڈالر (85 ملین پاؤنڈ) ہرجانہ ادا کرے گی۔ برطانوی نشریاتی ادارے کےمطابق 33 امریکی ریاستوں نےدعویٰ کیا تھا کہ ٹیکنالوجی کمپنی ایپل پرانےموبائل فونزکی کارکردگی اس لیےسست کردیتی ہےتاکہ اس کےصارفین نئےفونزخریدیں۔ 2016 میں آئی فون 6، 7 اورایس ای ماڈلزمیں بیٹری کےمسائل اور سست کارکردگی کا اسکینڈل سامنےآیا تھا جس سے لاکھوں صارفین متاثرہوئےتھے۔ ایپل کی جانب سے 2016 میں آئی فون 6 ،آئی فون 7 اور ایس ای کےلیےسافٹ وئیرفیچرمتعارف کرایا گیا تھا جوکہ پرانےآئی فونزکی کارکردگی سست کردیتا تھا۔ برطانوی میڈیا کا کہنا ہےکہ ایپل نے اس حوالےسےتبصرہ کرنےسےانکارکردیا تاہم اس سےپہلےکمپنی بیٹری لائف کوبرقراررکھنےکےلیےفونزکوسست کرنےکا اعتراف کرچکی تھی۔ ایپل پر رواں برس مارچ میں بھی فونزکی کارکردگی کےحوالےسے 500ملین امریکی ڈالرکا ہرجانہ عائد کیا جاچکا ہے۔ ٹیکنالوجی کمپنی ایپل 2017 میں ماہرین کی جانب سےغیرمعمولی سست کارکردگی جیسی شکایات کےبعد سوفٹ ویئراپ ڈیٹس کےذریعےپرانےآئی فونزکی رفتارکم کرنےکااعتراف کرچکی ہے۔

Back to top button