ٹیکنا لوجی

ایلون مسک نے ٹوئٹر کمپنی کو جواب دینے کے لئے حیران کن قدم اٹھا لیا

رواں سال اپریل کے آخر میں ایلون مسک اور ٹوئٹر کے درمیان 44 ارب ڈالرز میں سوشل میڈیا کمپنی خریدنے کا معاہدہ طے پایا تھا

ایلون مسک نے ٹوئٹر کمپنی کو جواب دینے کے لئے حیران کن قدم اٹھا لیا’ عدالت سے ایک اور درخواست میں استدعا کی گئی تھی ٹیسلا کے بانی کو معاہدہ مکمل کرنے کا حکم دیا جائے۔

انٹرنیشنل میڈیا کے مطابق ایلون مسک نے سوشل میڈیا پلیٹ فارم کو 44 ارب ڈالرز میں خریدنے سے انکار کردیا تھا جس پر کمپنی نے امریکی عدالت میں مقدمہ دائر کیا تھا۔ اب اس مقدمے پر ایلون مسک کی جانب سے ٹوئٹر کمپنی کے خلاف درخواست دائر کی گئی ہے۔ 164 صفحات کی اس درخواست کے کچھ حصے کو عوام کے لیے جاری کیا گیا ہے مگر تفصیلات موجود نہیں۔ ٹوئٹر کی جانب سے اس حوالے سے کوئی بیان جاری نہیں کیا گیا۔

دوسری جانب ٹوئٹر ایک شیئر ہولڈر نے بھی ایلون مسک کے خلاف مقدمہ دائر کیا ہے جس میں عدالت سے کہا گیا کہ ٹیسلا کے بانی کو معاہدہ مکمل کرنے کا حکم دیا جائے۔ ایلون مسک کی جانب سے یہ درخواست اس وقت دائر کی گئی جب ڈینور کی عدالت نے مقدمے کی 5 روزہ سماعت 17 اکتوبر سے شروع کرنے کا اعلان کیا گیا تھا۔

واضح رہے کہ رواں سال اپریل کے آخر میں ایلون مسک اور ٹوئٹر کے درمیان 44 ارب ڈالرز میں سوشل میڈیا کمپنی خریدنے کا معاہدہ طے پایا تھا۔ مگر ٹوئٹر کے شیئرز کی قیمتوں میں کمی کے بعد ایلون مسک نے کہا کہ وہ اس معاہدے پر پیشرفت اس وقت تک نہیں کرسکتے جب تک سوشل میڈیا کمپنی کی جانب سے اسپام اور فیک اکانٹس کی تعداد کے بارے میں مزید تفصیلات ان کے حوالے نہیں کی جاتیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ سمجھتے ہیں کہ جعلی اکانٹس کی تعداد ٹوئٹر کے بزنس کی جانچ پڑتال کا حصہ ہے کیونکہ یہ کمپنی زیادہ تر آمدنی اشتہارات سے حاصل کرتی ہے۔

پھر ان کی جانب سے 8 جولائی کو یو ایس سکیورٹیز اینڈ ایکس چینج کمیشن کے پاس جمع کروائی گئی دستاویزات میں کہا گیا کہ ٹوئٹر انتظامیہ جعلی اکانٹس کے بارے میں معلومات فراہم کرنے میں ناکام رہی اس لیے میں سوشل میڈیا کمپنی کو خریدنے کے اپنے معاہدے سے دستبردار ہورہا ہوں۔ اس کے بعد ٹوئٹر کی جانب سے ایلون مسک کے خلاف امریکی ریاست ڈیلاویئر کی عدالت میں مقدمہ دائر کرتے ہوئے اس کا ٹرائل جلد شروع کرنے کی درخواست کی گئی۔ ایلون مسک کی قانونی ٹیم کی جانب سے اس درخواست کی مخالفت کی گئی مگر عدالت نے مقدمے کا ٹرائل اکتوبر میں شروع کرنے کا فیصلہ سنایا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.