ٹیکنا لوجی

طب کا نوبیل انعام جیتنے والے سائنسدان کو ساتھیوں نے تالاب میں پھینک دیا

یہ منفرد جشن جرمنی کے میکس پلانک انسٹی ٹیوٹ میں منایا گیا جہاں پابو کے ساتھی انہیں نوبیل انعام جیتنے پر مبارک باد دینے آئے

ہر سال کی طرح رواں ماہ اکتوبر میں بھی طب کا نوبیل انعام جیتنے والے سوئیڈن کے سائنسدان سوانتے پابو کو ان کے ساتھیوں نے تالاب میں پھینک دیا۔

تفصیلات کے مطابق اس سال طب یا میڈیسن کا نوبیل انعام سوئیڈن کے سوانتے پابو کے نام رہا، سوانتے پابو نے سائبیریا کے ایک غار سے ملنے والی 40 ہزار سال پرانی انگلی کی ہڈی سے جینیاتی مواد نکال کر انسانوں کی ابتدائی اور ناپید ہوجانے والی نسل نیئندر تھال کا مکمل جینوم ترتیب دیا۔ یہ کام ہمیں سمجھنے میں مدد دے گا کہ ہم کہاں سے آئے ہیں اور ناپید ہو جانے والی انسانی نسلوں کے برعکس ہم اب تک کیسے پھل پھول رہے ہیں۔ نوبیل انعام جیتنے کے بعد سوانتے پابوکے ساتھیوں نے انہیں تالاب میں پھینکا جس کی ویڈیو سوشل میڈیا پر بھی وائرل ہورہی ہے۔

دراصل نوبیل انعام جیتنے کا جشن منانے کے لیے ساتھیوں نے سوانتے پابو کو تالاب میں پھینک دیا۔ یہ منفرد جشن جرمنی کے میکس پلانک انسٹی ٹیوٹ میں منایا گیا جہاں پابو کے ساتھی انہیں نوبیل انعام جیتنے پر مبارک باد دینے آئے۔ رپورٹس کے مطابق یہ پرانا رواج ہے کہ جب کسی سائنسدان کو سائنسی کامیابی ملتی ہے تو جب تک اسے تالاب میں نہ پھینکا جائے اس کامیابی کا جشن پورا نہیں ہوتا۔ نوبیل انعام کے آفیشل ٹوئٹر اکاؤنٹ سے سوانتے پابو کو ان کے ساتھیوں کی جانب سے تالاب میں پھینکنے کی ویڈیو بھی شیئر کی گئی۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.